تازہ ترین

Post Top Ad

منگل، 24 مارچ، 2020

وینٹی لیٹر اور ماسک کو لیکر نیویارک کے میئر بھڑ گئے صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے۔روش کمار

ریاستہائے متحدہ میں کورونا کے 41،561 واقعات ہوچکے ہیں۔ 504 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ان میں سے نصف سے زیادہ نیویارک میں ہوئے ہیں۔ یہاں پر 20،875 افراد میں کورونا انفیکشن پایا گیا ہے۔ 157 افراد کی موت ہوئی ہے۔نیویارک کے گورنر کوومو کا کہنا ہے کہ نیویارک کی 40 سے 80 فیصد آبادی میں کورونا انفیکشن ہوگا۔ نیو یارک کی آبادی 18 ملین بتائی جاتی ہے۔اتوار کی شام تک،  1800 افراد لو اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ 450 متاثرہ مریضوں کو آئی سی یو میں رکھا گیا تھا نیویارک کے میئر،ڈی بلیسیو صدر ٹرمپ سے بھڑ گئے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ صدر دفاعی پیداوار کے قانون کو نافذ نہیں کررہے ہیں تاکہ کمپنیوں کو لازم کیا جاسکے کی وہ ضروری چیزیں تیار کرنے اور فراہم کرنے کا پابند ہو نیویارک نے ٹرمپ حکومت سے 30 ملین N-95 ماسک کا مطالبہ کیا ہے۔پی پی ای نے 5 کروڑ سرجیکل ماسک اور ڈھائی لاکھ جوڑے کے دستانے،اور دیگر حفاظتی ملبوسات کا مطالبہ کیا ہے۔ 

میئر نے واضح کیا ہے کہ اسپتالوں کو سامان کی سخت ضرورت ہے۔میئر نے بتایا کہ 20 اپریل سے پہلے اسکول کھلنے کا کوئی امکان نہیں ہے۔ہندوستان کے کئی اضلاع کے ڈاکٹر لکھ رہے ہیں کہ ان کے پاس ماسک نہیں ہیں۔ اب میڈیکل طلبہ اپنے چندے سے پی پی ای خریدنے پر غور کر رہے ہیں۔لیکن جہاں سے سپلائی ہوگی وہاں سپلائی پر پابندی ہے۔خیر ڈاکٹروں ، نرسوں اور فرماسسٹ کو اپنی حفاظت کے بارے میں فکر ہے،جو کی درست ہے۔امریکہ نے اب تک ڈھائی لاکھ سے زیادہ نمونوں کی جانچ کی ہے۔ ہندوستان 20،707 تک جا پہنچا ہے۔ 22 مارچ کو 18،127نمونوں کی جانچ ہوئی تھی ایک دن میں 2580 نمونے کی ہی جانچ کی پوزیشن میں بھارت پہنچ سکا ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad