تازہ ترین

Post Top Ad

Tuesday, March 24, 2020

کرفیو توڑنے پر اُکسانے والی سعودی لڑکی گرفتار،ہوسکتا ہے5 سال کی قید اور 30 لاکھ ریال کاجرمانہ

سعودی عرب (یواین اے نیوز/اردو نیوز24مارچ2020)پبلک پراسیکیوشن نے کہا ہے کہ ’کرفیو کی خلاف ورزی کرنے والی سعودی لڑکی کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔سبق ویب سائٹ کے مطابق پبلک پراسیکیوشن نے کہا ہے کہ ’گرفتار شدہ لڑکی سے تفتیش جاری ہے، الزام ثابت ہونے پر امن عامہ میں خلل ڈالنے کی سزا ہوسکتی ہے‘۔ادارے نے بتایا ہے کہ ’امن عامہ میں خلل ڈالنا بڑا جرم ہے جس کے ارتکاب پر 5 سال قید اور 30 لاکھ ریال جرمانہ ہوسکتا ہے‘۔

قبل ازیں سعودی پبلک پراسیکیوشن نے کرفیو کی خلاف ورزی پر اکسانے والی سعودی لڑکی کو گرفتار کرنے کی ہدایت جاری کی تھی۔سوشل میڈیا کے مختلف ذرائع پر ایک مشہور سعودی لڑکی کا ویڈیو پیغام وائرل ہوا ہے جس میں اس نے لوگوں کو کرفیو کی خلاف ورزی پر اکسایا ہے۔اپنے ویڈیو پیغام میں لڑکی نے کہا ہے کہ ’10 ہزار کا جرمانہ رکھیں یا 10 لاکھ کا، میں تو گھر میں نہیں بیٹھوں گی‘۔انہوں نے مزید کہا کہ ’کرفیو کی پابندی کرنا میرے بس میں نہیں، میں گھر سے باہر نکلنے، لوگوں سے ملنے جلنے اور سیر وتفریح کے بغیر زندہ نہیں رہ سکتی‘۔

پبلک پراسیکیوشن نے مذکورہ لڑکی کی ویڈیو وائرل ہونے پر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ہدایت کی ہے کہ ’مشہور لڑکی کو تلاش کر کے فوری طور پر گرفتار کیا جائے‘۔پبلک پراسیکیوشن نے کہا ہے کہ ’لڑکی نے کرفیو توڑنے پر لوگوں کو اکسایا ہی نہیں بلکہ ملک کے ولی امر کے حکم کی خلاف ورزی پر بھی عوام الناس کو اکسانے کی کوشش کی ہے‘۔

No comments:

Post a Comment

Post Top Ad