تازہ ترین

Post Top Ad

جمعرات، 14 مئی، 2020

چھپ کر ممبئی سے اعظم گڑھ آئے شخص کو کورونا پازیٹو نکلا۔مچی افراتفری، پورے گاؤں کو کیا گیا سیل۔

اعظم گڑھ(یواین اے نیوز14مئی2020)دوسری ریاستوں سے آنے والے تارکین وطن مزدوروں کی وجہ سے اب ضلع میں کورونا کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ جمعرات کے روز ، مہناج پور پولیس اسٹیشن کے علاقے جیا پور گرام پنچایت میں ممبئی سے روپوش ایک شخص کورونا مثبت پایا گیا ہے۔ جس کے بعد ضلع میں ہنگامہ برپا ہوگیا۔ محکمہ صحت کی ٹیم گاؤں پہنچ گئی ہے اور اس نے نوجوانوں کو گورنمنٹ میڈیکل کالج میں کورنٹائین کردیا اور انتظامیہ نے پورے گاؤں کو سیل کردیا ہے۔اپ کو بتادیں کہ جیاپور گاؤں کا ایک شخص چھپ چھپا کر ممبئی سے گھر پہنچا تھا جسکے دوتین روز بعد اسکو سردی بخار کی علامت ظاہر ہونے پر گاؤں والوں کی اطلاع پر اسکو محکمہ صحت نے جانچ کیا تو کورونا پازیٹو نکلا۔

 جمعرات کو رپورٹ مثبت آنے کے بعد انتظامیہ اور محکمہ صحت میں ہلچل مچ گئی۔ اس نوجوان کو گورنمنٹ میڈیکل کالج میں قرنطین کردیا گیا تھا۔ اسی کے ساتھ ہی ،پورے کنبے کو بھی گھر پر ہی قرنطین کیا جارہا ہے ۔اس کے ساتھ ہی اس شخص کے ساتھ رابطے میں آنے والوں کو قرنطین کرنے کی بھی تیاریاں کی جارہی ہیں۔ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے جیا پور گرام پنچایت کو حکم دیا ہے کہ وہ پورے گاؤں کو سیل کردیں۔

ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے اپیل کی ہے کہ اگر کوئی کہیں سے چوری چھپےگاؤں میں آتا ہے تو اس کی اطلاع پولیس ، مانیٹرنگ کمیٹی ، کنٹرول روم کو دی جائے تاکہ ان سے تفتیش ہوسکے۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے کہا کہ باہر سے آنے والے افراد گھر میں داخل ہونے سے قبل مکمل تحقیقات کے بعد ہی گھر میں داخل ہوں اور انہیں کم از کم 14 دن گھر سے دور رکھیں نیز ان سے ملنے کی کوشش نہ کریں۔

اس کے ساتھ ہی ضلعی مجسٹریٹ نے آگاہ کیا کہ معلومات نہ فراہم کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے گا اور انہیں جیل بھیجا جائے گا۔ ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ ضلع میں اب تک کورونہ کے دس مریض مل چکے ہیں۔ جن میں سے آٹھ کی بازیافت ہوچکی ہے۔ گذشتہ ہفتے رانی کے سرائے تھانہ علاقے میں دہلی سے آنے والا ایک شخص کورونا مثبت پایا گیا تھا اور اب مہناج پور کے علاقے میں ایک شخص کورونا مثبت پایا گیا ہے۔ اب ضلع میں کل دو فعال واقعات ہوئے ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad