تازہ ترین

Post Top Ad

بدھ، 1 جولائی، 2020

اترپردیش،فریاد لیکر گئی خاتون کو تھانہ صدر نے دیکھایا نجی حصہ،ویڈیو وائرل

دوریا ۔(یو این اے نیوز 30جون 2020) اترپردیش کی دیوریا پولیس کا شرمناک چہرہ سامنے آگیا ہے۔  تھانہ بھٹنی کے انچارج کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں وہ اپنے چیمبر میں فحاشی کی وارداتیں کرتے (نجی حصے دکھا رہے ہیں اور اشارے کرتے ہوئے) دکھائی دے رہا ہے ۔  جس کے بعد محکمہ پولیس میں ہلچل مچی ہے۔  بتایا جارہا ہے کہ اس ویڈیو کو ایک فریادی  خاتون نے بناکر  وائرل کیا گیا ہے ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ملزم انسپکٹر بھیشپال سنگھ یادو کے خلاف دفعہ 111/2020 ، 354 (ا) / 509/166 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔  ملزم بھیشپال سنگھ یادو پہلے ہی ایک اور معاملے میں معطل ہے۔

 انسپکٹر نے عورت کو نجی حصہ دکھایا
 اہم بات یہ ہے کہ بھٹنی کے علاقے کی ایک خاتون کا اپنے پٹی دار سے زمینی تنازعہ چل رہا تھا۔  خاتون اسکی  شکایت لیکر  اپنی لڑکی کے ساتھ ایس ایچ او  کے پاس جایا کرتی تھی۔  لیکن یہ ایس ایچ او  قانون کی کرسی پر بیٹھ کر بےحیائی کا کام کرتا تھا۔  بچی نے کئی دنوں تک اس گھناؤنے فعل کو دیکھا اور جب وہ اسے برداشت نہیں کرسکی تو اس نے انسپکٹر کا اسٹنگ آپریشن کرکے ویڈیو وائرل کردی۔

 متاثرہ لڑکی انصاف مانگ رہی ہے

 اس معاملے میں ، متاثرہ بچی کا کہنا ہے کہ "میں درخواست کے ساتھ جتنی بار داروغہ جی کے پاس گئ ہوں ۔  میں یا تو اپنی ماں کے ساتھ جاتی ہوں یا اپنے والد کے ساتھ۔  ہمارا اراضی کا تنازعہ پٹی دار  سے چل رہا ہے۔ داروغہ کی گندی حرکت کو دیکھ کر  ایک دو دفعہ نظر انداز کیا ، ایسی باتیں ہوتی رہتی ہیں۔  لیکن جب  قانون کی حفاظت کرنے والے ایسا کرینگے تو عوام کا کیا بنے گا۔  تب میں نے یہ ویڈیو بنائی اور میرے رشتے دار بھی یہاں آئے۔  ان کے ساتھ بھی ایسا ہی ہوا ، لیکن ہم نے کچھ نہیں کہا۔  ہم انصاف چاہتے ہیں

 انسپکٹر معطل کردیا گیا
 اس معاملے پر ، ایس پی کا کہنا ہے کہ ایک خاتون اپنی فریاد  سابق تھانہ انچارج تھانہ بھٹنی کے پاس لائی تھی۔  اس کے ساتھ فحش کاموں میں ملوث ہونے کی کوشش کی گئی۔  اس انسپکٹر کے خلاف تھانہ بھٹنی میں سنگین دفعات کے تحت مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔  انسپکٹر بھیشپال سنگھ یادو کو بھٹنی سے سلیم پور منتقل کیا گیا تھا ، انہیں معطل کردیا گیا ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad