تازہ ترین

Post Top Ad

جمعہ، 11 ستمبر، 2020

ساجد خان پر ماڈل نے لگایا الزام ۔17 سال کی عمر میں کیا جنسی زیادتی

مہاراشٹر ۔(یو این اے نیوز 11ستمبر 2020) سال 2018 میں بالی ووڈ کی دنیا میں می ٹو تحریک نے زبردست طریقے سے کہرام برپا کیا ہوا تھا  اس  دوران، ڈایریکٹر ساجد خان پر ایک صحافی سمیت بہت سے ماڈل اور فلمی دنیا میں کام کرنے والی لڑکیوں نے ،استحصال کرنے کا  الزام لگایا .اسکا اثر یہ پڑا کی  اس وقت 'ہاؤس فل 4 ' کے سیٹ پر کام کر رہے ایک اہم 
عہدے سے انہیں ہٹا دیا گیا . ساجد عوامی سطح پر کم ہی نظر آتے ہیں،


 اب ایک ماڈل پاؤلا نے ساجد پر جنسی زیادتی کرنے کا  الزام لگایا ہے. اس نے انسٹراگرام  پر ایک لمبی آپ بیتی لکھی ہے . پاولا نے کہا کہ وہ می ٹو مومنٹ کے  دوران خاموش رہیں ۔کیونکہ انڈسٹری  میں انکا  کوئی گارڈ فادر  نہیں ہے۔ اور خاندان کے لئے  انھیں کام کرنا ضروری تھا  اب ان کے والدین  انکے ساتھ نہیں ہیں ۔ ایسے میں  وہ ڈائیریکٹر کے خلاف بات کر سکتیں ہیں. پاؤلا نے الزام لگایا ہے کہ 17 سال کی عمر میں،میرے ساتھ جنسی زیادتی کی گئی 


. پاؤلا لکھتی  ہیں کہ 'جب می ٹو تحریک شروع ہوئی  تو، بہت سے لوگوں نے ساجد خان کے خلاف بات کی تھی لیکن میں جرات نہیں دکھا سکی ۔ کیونکہ میرے پاس دوسرے فنکاروں کی طرح میرا کوئی گارڈ فادر نہیں ۔مجھے خاندان کے لئے کمانا پڑ رہا تھا ۔اسی لیے میں اسوقت چپ تھی ،اب میں اپنے والدین کے ساتھ نہیں ہوں. میں اپنے لئے کما رہی ہوں. میں ہمت دیکھا سکتی ہوں اور  یہ بتانا چاہتی ہوں کہ جب میں 17 سال کی تھی ۔ساجد خان نے میرا جنسی استحصال کیا تھا

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad