تازہ ترین

Post Top Ad

بدھ، 20 مئی، 2020

بی جے پی اپنا جھنڈا لگانا چاہے تو لگائے ، لیکن بسیں چلنے دیں: پرینکا گاندھی

لکھنؤ (یواین اے نیوز20مئی2020)مہاجروں کو دستیاب بسوں کے بارے میں یوپی حکومت اور کانگریس کے مابین جو سیاست شروع ہوئی ہے وہ کسی وقت بھی وقت رکنے کا نام نہیں لے رہی ہے۔ کانگریس کے جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے اس معاملے پر ایک بڑا بیان دیا ہے۔پرینکا نے کہا کہ اگر یوپی حکومت پیدل سفر کرنے والے تارکین وطن مزدوروں کے لئے بسوں کا استعمال کرنا چاہتی ہے تو وہ کرسکتی ہیں۔ اگر آپ اپنی پارٹی کے جھنڈے اور اسٹیکرز بسوں میں لگانا چاہتے ہیں تو لگائیں لیکن بسوں کو چلنے کی اجازت دیں۔بسیں ابھی بھی سرحد پر کھڑی ہیں۔ اس سے 82 ہزار افراد آسانی سے گھر پہنچ سکتے ہیں۔

پرینکا گاندھی سوشل میڈیا پر براہ راست آئیں اور کہا ، “ہم سب کو اب اپنی ذمہ داری کو سمجھنا ہوگا۔ یہ ہندوستان کے وہ لوگ ہیں جو ہندوستان کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں ، جن کے خون اور پسینے سے یہ ملک چلتا ہے۔ ہر ایک کو اپنے سیاسی مفادات سے گریز کرکے مثبت انداز میں لوگوں کی مدد کرنے میں حصہ لینا چاہئے۔کانگریس کے جنرل سکریٹری نے مزید کہا ،"آج شام 4 بجے سرحد پر کھڑی ان بسوں کو 24 گھنٹے ہوجائیں گے۔ اگر آپ کو استعمال کرنا ہے تو ہمیں اجازت دیں۔ اگر آپ کو بی جے پی کے جھنڈے اور اسٹیکرز لگانا ہوں تو بیشک لگائیے، اگر آپ یہ کہنا چاہتے ہیں کہ آپ نے مہیا کیا ہے تو ، پھر یہ بھی کہیں لیکن ان بسوں کو چلانے دیں۔ "

پرینکا نے کہا ، 'ہم نے 17 تاریخ کو غازی آباد بارڈر پر 500 بسیں کھڑی کی تھیں ،اگر یہ بسیں چلتی تو کم از کم 20 ہزار افراد سلامت پہنچ جاتے۔ 19 تاریخ کو ، ہم نے 900 بسیں فراہم کیں (500 یوپی راجستھان سرحد پر اور کچھ غازی آباد سرحد پر) ، لہذا کل اور آج سمیت 36 ہزار افراد گھر پہنچیں چکے ہوتے۔کرونا بحران کے بیچ میں اترپردیش حکومت کو کانگریس نے 1 ہزار بسوں کی پیش کش کی گئی تھی تاکہ مہاجر مزدوروں کو گھروں تک آسانی سے لے جایا جائے۔ پرینکا گاندھی کے سکریٹری سندیپ سنگھ نے یوگی حکومت کو ایک خط بھیجا تھا جس میں تمام بسوں کو اجازت دینے کی درخواست کی گئی تھی۔

لیکن یوپی حکومت نے کانگریس پر الزام لگایا کہ دی گئی بسوں کی فہرست میں کچھ غلطیاں ہیں۔ حکومت کے مطابق ان میں سے کئی کے پاس دو پہیئوں ، تین پہیوں اور کاروں کےنمبر اندراج ہیں۔ لیکن کانگریس نے اس کی تردید کی ہے۔ کانگریس کے مطابق ،بسیں راجستھان یوپی سرحد پر کھڑی ہیں اور اتر پردیش کے آگرہ ضلع میں داخل ہونے کی اجازت کی منتظر ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad