تازہ ترین

Post Top Ad

بدھ، 17 جون، 2020

خواجہ معین الدین چشتی کی توہین کرنے والے اینکر کے خلاف سپریم کورٹ جائیں گے۔مولانا ارشد مدنی

نئی دہلی(یواین اے نیوز 17جون2020) جمعیت علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی نے خواجہ معین الدین چشتی اجمیری رحمت اللہ علیہ کیخلاف نازیبا تبصرے پرسختی سے مذمت کرتے ہوئے ان کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔مدنی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ میں اس معاملے پر پہلے ہی زیر غور معاملہ ہونے کے باوجود ، ٹی وی اینکرز مسلمانوں کے دل کو تکلیف پہنچانے سے باز نہیں آرہے ہیں۔ مولانا مدنی نے کہا کہ حکمران عوام کی سرپرستی کی وجہ سے نئے اینکروں کی ہمت اتنی بڑھ گئی ہے کہ مسلمانوں کے طور طریقوں پر انگلیاں اٹھاتے ہوئے اب مسجد مدارس اور خانقاہوں تک پہنچ گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ معین ہند حضرت خواجہ معین الدین چشتی اجمیری کی شان میں ، جس انداز میں ایک ٹی وی چینل کے اینکر نے گستاخانہ الفاظ بولے اور ڈاوکو اور لٹیرا تک کہہ ڈالاہے،اس سے نہ صرف بھارت بلکہ دنیا بھر کے تمام مذاہب کے لوگ جو خواجہ صاحب میں اپنا یقین رکھتے ہیں ، ان کے دل کو تکلیف پہنچی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حضرت خواجہ اجمیری کو نہ صرف مسلمان بلکہ دنیا میں پائے جانے والے تمام ذات پات مذہب اور برادریوں کا ایک بہت بڑا حصہ محبت کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حضرت خواجہ معین الدین چشتی برصغیر ہندوپاک میں اسلامی تعلیم و انسانی اقدار کے ایک زبردست وکیل اور ایک غیرمتنازعہ روحانی مالک کی حیثیت سے ایک انوکھا مقام رکھتے ہیں۔ ایسے غیر متنازعہ روحانی مالک کی توہین کرنا اور اس کے خلاف بات کرنا آئینی طور پر غلط ہے۔ لہذا ،حکومت کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر اس چینل اور خاص طور پر اینکر کے خلاف کارروائی کرے۔

 آپ کو بتادیں کہ جمعیت علمائے ہند نے میڈیا کے ذریعہ مسلمانوں کو تکلیف پہنچانے ، ان کے خلاف غلط مہم چلانے اور ان پر کورونا کا الزام لگانے کے میڈیا کے پروپیگنڈے کے خلاف سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کیا ہے۔ جس کی سماعت جمعہ 19 جون کو ہوگی۔جمعیت علمائے ہند نے حضرت خواجہ اجمیری کی توہین کے اس شرمناک واقعہ کو بھی شامل کیا ہے۔ اس پرسپریم کورٹ بار کونسل کے چیئرمین ،دوشیانت دیو معائنہ کریں گے۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Top Ad